Local news

کمشنر سیکرٹری جنگلات کا دورہ ¿ گاندربل

Summary

ضلع کے آبی ذخائر کا جائزہ لیا گاندربل/14 ستمبر 2021ئ کمشنر سیکرٹری جنگلات و ماحولیات سنجیو ورما نے آج ضلع گاندربل کا دورہ کیا اور وہاںضلع کے آبی ذخائر کا جائزہ لیا۔کمشنر سیکرٹری کے ہمراہ ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل کرتیکا […]

ضلع کے آبی ذخائر کا جائزہ لیا
گاندربل/14 ستمبر 2021ئ
کمشنر سیکرٹری جنگلات و ماحولیات سنجیو ورما نے آج ضلع گاندربل کا دورہ کیا اور وہاںضلع کے آبی ذخائر کا جائزہ لیا۔کمشنر سیکرٹری کے ہمراہ ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل کرتیکا جیوتسنا ، اے سی آر گاندربل ، ریجنل وائلڈ لائف وارڈن کشمیر ، اے سی ڈی ، ڈی ایف او سندھ فارسٹ ڈویژن گاندربل اور دیگر متعلقین تھے۔کمشنر سیکرٹری نے آہن سر ، وسکور اسر اور مانسبل جھیلو ں کا دورہ کیاتاکہ اِن آبی ذخائر کے اِنتظام کا جائزہ لیا جاسکے ۔ یہ تین واٹر باڈیز 2017ءکے ویٹ لینڈ مینجمنٹ رولز کے تحت آبی ذخائرکے طور پر نوٹیفائیڈ ہونے کے دہانے پر ہیں ۔ڈی ایف او نے کمشنر سیکرٹری کو جانکاری دی کہ ضلع اِنتظامیہ کی جانب سے اِس حوالے سے مختصر دستاویزات پہلے ہی تیار اور جمع کرائی جاچکی ہے۔کمشنر سیکرٹری نے اِن آبی ذخائر کے لئے مینجمنٹ پلان کی تیاری کی ہدایت دی کہ وہ ڈی سلٹیشن او رڈیویڈنگ کے کام کو یقینی بنائیں۔ اُنہوں نے اِس کے لئے ریونیو ، فارسٹ اور دیہی ترقی محکموں کے تعاون طلب کیا تاکہ اِن آبی ذخائر کوماضی کی شا ن رفتہ بحال کیا جا سکے۔کمشنر سیکرٹری نے کہا کہ اِن آبی ذخائرکے لئے اِنتظامی منصوبہ بنایا جائے گا جس میں تمام جزو شامل ہوں گے تاکہ ان آبی ذخائر کو قدیم شان رفتہ کو بحال کیا جاسکے جو نہ صرف جھیلوں کے آبی اور فضائی تنوع میں اِضافہ کرے گا بلکہ اِن علاقوں کی سیاحتی صلاحیت کو بھی فروغ ملے گا۔دریں اثنا کمشنر سیکرٹری نے پی آر آئیز اور مقامی لوگوں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا اور اُن پر زور دیا کہ وہ ان آبی ذخائرکے تحفظ میں اِنتظامیہ کی مدد کریں کیوں کہ اِن آبی ذخائر کے کناروں پر رہنے والے لوگوں کی روزی کا انحصار بڑی حد تک آبی ذخائرپر ہے ۔اُنہوں نے اِس بات پر زور دیا کہ لوگوں میں بالخصوص ان آبی ذخائر کے اَطراف میں رہنے والے لوگوں کوان علاقوں کی قدرتی قدروں کے بارے میں بیداری پیدا کریںاور کسانوں کو کیمیائی کھادوں کے بجائے بائیو کھاد اِستعمال کرنے کی ترغیب دی جائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *