NATIONAL

وزیر اعظم نے راجہ مہندر پرتاپ سنگھ یونیورسٹی کے ماڈل کا مشاہدہ کیا

Summary

علی گڑھ،14ستمبر(اے یو ایس)علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کا نام بدل کر راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے نام پر رکھنے کی بی جے پی کے پرانے مطالبہ کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی منگل کو مجاہد ا?زادی کے نام پر اے […]

علی گڑھ،14ستمبر(اے یو ایس)علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کا نام بدل کر راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے نام پر رکھنے کی بی جے پی کے پرانے مطالبہ کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی منگل کو مجاہد ا?زادی کے نام پر اے ایم یو کے بغل میں بننے والی ایک نئی یونیورسٹی کی سنگ بنیاد رکھی۔ اس دوران گورنر ا?نندی بین پٹیل، وزیراعلیٰ یوگی ا?دتیہ، نائب وزیر اعلیٰ اور وزیر تعلیم دنیش شرما موجود رہے۔ اس کے ساتھ ہی نریندر مودی علی گڑھ میں اترپردیش ڈیفنس انڈسٹریل کاریڈور اور راجہ مہندر پرتاپ سنگھ اسٹیٹ یونیورسٹی کے ماڈل کا بھی مشاہدہ کیا۔علی گڑھ میں وزیر اعلیٰ یوگی ا?دتیہ ناتھ نے کہا کہ کورونا بحران میں وزیر اعظم مودی نے زندگی اور رزق دونوں پر زور دیا ارو اسے بچانے کا کام کیا۔ راجہ مہندر پرتاپ سنگھ یونیورسٹی کول تحصیل کے لوڈھا اور موسیر پور کریم جرولی گاوں کی 92 ایکڑ سے زیادہ پر محیط زمین پر تعمیر کی جائے گی۔ علی گڑھ منڈل فکے 395 یونیورسٹیوں کو اس سے متعلق کیا جائے گا۔مشہور مورخ شان محمد نے بتایا کہ جاٹ برادری کے راجہ مہندر پرتاپ سنگھ جنگ ا?زادی کی اہم ہستیوں میں سے تھے اور ایک اور سیکولر جمہوری ہندوستان کے تئیں ان کے عزم نے ان کا قد کافی بڑھا دیا تھا۔ سیکولرازم کے تئیں ان کے عزم کا موازنہ مہاتما گاندھی اور پنڈت جواہر لال نرو سے کیا جاتا ہے۔سال 2014 میں بی جے پی کے کچھ مقامی لیڈروں نے علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کا نام تبدیل کرکے راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے نام پر رکھنے کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کی دلیل تھی کہ راجہ مہندر پرتاپ سنگھ نے اے ایم یو کے قیام کے لئے زمین عطیہ کی تھی۔ یہ معاملہ تب اٹھا جب علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے تحت سٹی اسکول کی 1.2 ہیکٹر اراضی کی لیز کی مدت ختم ہو رہی تھی اور راجہ مہندر پرتاپ سنگھ کے قانونی وارث لیز کی تجدید نہیں کرنا چاہتے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *